105

مگرمچھ آٹھ سالہ بچی کو والدین کے سامنے زندہ کھاگیا

کراچی: سکھر کی صالح پیٹ تحصیل میں نارا کینال کے کنارے جمعہ کے روز مگرمچھ نے آٹھ سالہ بچی پر حملہ کیا اور اسے زندہ کھا گیا۔

والدین کے مطابق ان کی بیٹی نارا نہر کے کنارے پر کھڑی تھی جہاں اچانک مگرمچھ نے اسے دبوچ لیا اوردیکھتے ہی دیکھتے بچی کو زندہ کھا لیا۔ اس خوفناک حملے کو بھی مقامی رہائشیوں نے بھی رپورٹ کیا۔

مقامی لوگوں نے بھی بچی کی جان بچانے کے لئے فورا نہر طرف دوڑ لگائی ہے تاہم تمام کوششیں ناکام رہی۔ مگرمچھ نے اسے اپنے زور دار جبڑوں میں جکڑ لیا اور گہرے پانی میں تیرتے ہوئے بچی کو زندہ نگل گیا۔

مقامی رہائشیوں نے بتایا ہے کہ یہ ایک بہت بڑا مگرمچھ تھا اور اس کی لمبائی 16 فٹ سے زیادہ تھی۔ جب محکمہ سندھ وائلڈ لائف سے اس واقع کے مطلق رابطہ کیا گیا توانہوں نے بتایا کہ سندھ میں دریائے ڈیلٹا چینل نہر نارا میں مختلف اقسام کے 300 سے زیادہ مگرمچھ موجود ہیں۔

اس سے قبل بھی اس نہر کے کنارے مگرمچھ مختلف جانوروں کو کھاتے رہتے تھے۔ مگر انسان کو کھانے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

ستمبر 2011 میں نبی بخش منگریو گاؤں میں بھی ایک واقعہ پیش آیا تھا جہاں رہائشیوں نے ایک مگرمچھ کو پکڑا لیا جو آبادی میں داخل ہوا تھا۔

دیہاتیوں نے دعوی کیا تھا کہ نو فٹ مگرمچھ نے ایک بکرے پر حملہ کیا تھا ، تاہم ، مکین اس کو پکڑنے میں کامیاب ہوگئے تھے اور اسے رسی کے استعمال سے باندھ دیا تھا۔ بعدازاں ، محکمہ وائلڈ لائف کی ایک ٹیم گاؤں پہنچ گئی تھی اور اسے پکڑ کر نہر میں چھوڑ دیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں